May 22, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/bodyfitnessinfo.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

صدر جوبائیڈن اور جوسٹ کے ٹرمپ پر طنزیہ نشتر

US President Joe Biden attends the White House Correspondents' Association (WHCA) dinner at the Washington Hilton, in Washington, DC, on April 27, 2024. (AFP)

صدر جوبائیڈن نے بظاہر لطیفوں اور مزاح کا خود کو نشانہ بنایا۔ لیکن بہت ہوشیاری سے ٹرمپ کی شخصیت ان کے نشانے پر رہی۔ یہ صورتحال ہفتہ کی رات وائٹ ہاؤس کو کور کرنے والے نامہ نگاروں کی ایسوسی ایشن کے سالانہ ڈنر کے موقع پر دیکھنے میں آئی۔ اس موقع پر باہر احتجاجی مظاہرین غزہ کی صورتحال پر مظاہرے کر رہے تھے۔

عشائیہ کے لیے بہت اہم مہمانوں کی ایک لمبی فہرست تھی۔ جن میں صحافی ، نامور شخصیات شامل تھیں۔

معزز مہمان جب عشائیے کے لیے ہلٹن پہنچے تو ایک سو سے زائد غزہ میں جنگ کے مخالف مظاہرین ہوٹل کے باہر مہمانوں کے سامنے موجود تھے۔ وہ معزز مہمانوں اور میزبان صدر جوبائیڈن کے لیے نعرہ زنی کرتے ہوئے کہہ رہے تھے ‘آپ سب پر لعنت ہو’

فلسطینی حامی مظاہرین 27 اپریل 2024 کو واشنگٹن ڈی سی میں واشنگٹن ہلٹن میں وائٹ ہاؤس کے نامہ نگاروں کی ایسوسی ایشن (WHCA) کے عشائیہ کے باہر مظاہرہ کر رہے ہیں۔ (AFP)

فلسطینی حامی مظاہرین 27 اپریل 2024 کو واشنگٹن ڈی سی میں واشنگٹن ہلٹن میں وائٹ ہاؤس کے نامہ نگاروں کی ایسوسی ایشن (WHCA) کے عشائیہ کے باہر مظاہرہ کر رہے ہیں۔ (AFP)

تاہم عشائیے کے ہال میں غزہ کا موضوع جوبائیڈن کے موضوعات اور ہونٹوں دونوں سے دور تھا۔ کہ مزاحیہ اداکار کولن جوسٹ کی یہ ہفتے کی رات براہ راست دیکھی جا رہی ہے۔

جوسٹ نے کہا ‘میں بتاؤں گا کہ دس بجے رات کے بعد وہ سو جاتا ہے۔ جبکہ جوبائیڈن ابھی بھی جاگ رہا ہے۔’ جوسٹ نے ٹرمپ کا سونے کے حوالے سے ذکر جاری رکھتے ہوئے کہا ‘اس نے پچھلا پورا ہفتہ صبح کے وقت عدالتوں میں سو سو کر گزارا ہے۔’

یہ گفتگو اس ماحول میں جاری رہی کہ 81 سالہ صدر جوبائیڈن اپنے 77 سالہ صدارتی مد مقابل ڈونلڈ ٹرمپ کو خیالوں ہی خیالوں اور لفظوں ہی لفظوں میں کہنیاں مارتے رہے۔ جوبائیڈن نے کہا ‘میرے اور اس کے درمیان صرف پیرانہ سالی ہی ایک مشترک بات ہے۔ میری نائب صدر بھی اس بات کی تائید کرتی ہیں۔’

جوسٹ اور جوبائیڈن نے بعض لمحوں پر بہت سنجیدہ گفتگو کی۔ جس سے حاضرین کو لگا کہ یہ جنگ کا ہی ایک موقع ہے۔ جوبائیڈن نے کہا ‘6 جنوری 2021 کے بعد ٹرمپ کا بیانیہ زیادہ خطرناک ہوگیا جب اس کے حامیوں نے کیپیٹل ہل پر حملہ کیا تھا۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ کبھی کسی شخص کے مفادات قومی مفاد سے زیادہ بلند تر نہیں ہو سکتے۔’

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *